اسلام آباد( آن لائن) چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ بے ایمانی اور فراڈ کرنے والوں پر تا حیات پابندی ہونی چاہیے ۔یہ ریمارکس انہوں نے نااہلی کی مدت کے تعین کیس کی سماعت کے دوران دیئے ۔چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ نے آرٹیکل 62 ون ایف کی تشریح اور نااہلی کی مدت کے تعین کے کیس کی سماعت کی۔ سابق وزیراعظم نواز شریف کی طرف سے سینئر وکیل اعظم نذیر تارڑ پیش ہوئے اور کیس کی تیاری کیلئے تین دن کا وقت دینے کی درخواست کی جو عدالت عظمیٰ نے منظور کرلی۔