کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) نقیب اللہ محسود قتل کیس میں سابق ایس ایس پی سی ٹی ڈی راو انوار کے خلاف مقتول نیب اللہ کے دونوں دوستوں حضرت علی اور محمد قاسم نے بیان ریکارڈ کروا دیا۔نجی ٹی وی کے مطابق مقتول کے دونوں دوستوں نے عدالت میں بیان ریکارڈ کرواتے ہوئے کہا کہ سادہ لباس میں ملبوس اہلکاروں نے انہیں ابوالحسن اصفہانی رو ڈ سے اٹھایا اور سچل تھانے میں بند کردیا ۔انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ پولیس نے ان سے 4300 روپے اور موبائل چھین کر وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا جبکہ انہیں 72گھنٹے کے بعد چھوڑ دیا گیا ۔انہیں آنکھوں پر پٹی باندھ کر جس بڑے پولیس افسر کے سامنے پیش کیا گیاتھا۔ اس افسر کو ہم نے ٹی وی پردیکھ کر اور اس کی آواز سن کر پہچان لیا کہ وہ راﺅ انوار ہی ہے حضرت علی اور محمد قاسم نے عدالت کو روتے ہوئے بتایا کہ نقیب اللہ نے انہیں بتایاتھا کہ پولیس اس سے 10لاکھ مانگ رہی ہے۔