اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیر اعظم نواز شریف کا کہاہے کہ 28 جولائی کے فیصلے میں حکومت کو مفلوج کرکے ایگزیکٹو کو بے اختیار کر دیا گیا جبکہ کہ مجھے پارٹی صدارت سے نااہل کر کے مقننہ کا بھی اختیار چھین لیا گیا۔احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے کہا کہ میرے پاس اب میرا نام ’ محمد نواز شریف‘ ہی بچا ہے اس کو بھی آئین کی کسی شق کے تحت چھین لیں۔ اس کو بھی چھیننا ہے تو چھین لو، آئین کے اندر ایسی شق ڈھونڈ لو جس سے آپ کو اس کام میں مدد مل سکے اور اگر کوئی شق نہیں ملتی تو بلیک لا ڈکشنری کی مدد حاصل کرلو۔