اسلام آباد( ڈیلی حروف ڈاٹ کام ) ممتاز دانشور، مزہبی رہنما ، چیئر مین سنی کونسل پاکستان علامہ نزاکت حسین گولڑوی نےکہا ہے کہ مثبت خارجہ پالیسی کے باوجود کشمیر ایشو پر ہم خاطر خواہ توجہ نہ دے سکے جس کے باعث بھارت کے حوصلے بڑھ گئے اور اس نے تمام عالمی قوانین اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کو پس پشت ڈال کر مقبوضہ کشمیر پر قبضہ کر لیا ۔

علامہ نزاکت حسین گولڑوی نے کہا کہ عین اس وقت جب مقبوضہ کشمیر لہو لہان ہے، متحدہ عرب امارات کی حکومت کی طرف سے کشمیری مسلمانوں کے بد ترین قاتل مودی کو اعلٰی ترین سول ایوارڈ دے کر کشمیر کاز اور مظلوم کشمیریوں کی کمر میں چھرا گھونپا گیا۔

Allama Nazakat Hussain Golarvi

علامہ نزاکت حسین گولڑوی نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن کی زیر صدارت سالہا سال تک کشمیر کمیٹی پر اربوں روپے خرچ کیے گئے، اس کا نتیجہ کیا نکلا؟ اس کمیٹی نے کشمیر کاز کے لیے کیا کیا؟ اگر یہ کمیٹی کچھ کام کرتی تو آج یو اے ای کے حکمران، قاتل مودی کو کشمیری مسلمانوں کا قتل عام کرنے پر یوں ایوارڈ سے نہ نوازتے۔

چیئر مین سنی کونسل پاکستان نے وزیر اعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے اپیل کی کہ کشمیر کاز کے بہترین مفاد مین کشمیر کا سفارتی مشن سنی علماء کونسل پاکستان کے جید علماء کے سپرد کیا جائے۔ علامہ نزاکت حسین گولڑوی نے کہا کہ ہزاروں جید سنی علماء کشمیر سفارتی مشن کو اپنا مقدس فریضہ جان کر اپنی جان لڑانے کو تیار ہیں۔


علامہ نزاکت حسین گولڑوی نے وزیراعظم اور آرمی چیف سے اپیل کی کی 80% سنی عوام کے نمائندہ علماء کو کشمیر کے سفارتی مشن پر خصوصی طور پر عرب ممالک میں بھیجا جائے تا کہ عرب حکمرانوں کو مسئلہ کشمیر پر اصل تصویر دکھائی جا سکے ۔