hakeem aftab azeem

نامور طبیب ،محقق، ادیب ،شاعر، کالم نگار، صحافی ،پروفیسر حکیم شیخ آفتاب عظیم رحمتہ اللہ علیہ کی آج پہلی برسی ہے۔

ہمارے بعد اندھیرا رہے گا محفل مین۔ ۔۔۔۔۔

بہت چراغ جلاو گے روشنی کے لئے۔ ۔۔۔

hakeem aftab azeem

لاہور( طاہر ندیم) نامور طبیب، باکمال نباض،سینئر صحافی، معروف ادیب، دانشور، شاعر، کالم نگار، پروفیسر حکیم شیخ آفتاب عظیم رح کو اس دنیائے فانی سے کوچ کئے ہوئے آج پورا ایک سال بیت گیا۔

آفتاب عظیم جتنے باکمال طبیب تھے اس سے زیادہ دریا دل،سخی اور غریب پرور شخصیت تھے۔
مستحق اور غریب مریضون کو ناصرف مفت ادویات دیتے بلکہ ان کی مٹھی میں چپکے سے ہزار یا دو ہزار کے نوٹ تھما دیتے اور ہدایت کرتے کہ گھر جا کر دودھ پی لینا۔
مین نے انہین سینکڑون مریضون، دوستون، پرانے ساتھیون اور ضرورتمندون کی مالی امداد کھلے دل سے کرتے ہوا دیکھا۔
کئی ضرورت مندون کو عمرہ کرا دیا۔ بیواون کے سر پر ہاتھ رکھا کرتے۔ ان کی وفات کو سال ہو گیا۔ لیکن آج بھی خواتین اور مرد مریضون کو دھاڑین مار مار کر روتے اور بیہوش ہوتے دیکھا ہے۔
آفتاب عظیم اتنے باکمال نباض تھے کہ جب مریض کی نبض پر ہاتھ رکھتے تو سارے بدن کا الٹر ساونڈ کر دیتے۔
روایتی نسخون کی بجائے گہری سوچ بچار اور تحقیق کے نتیجے مین اپنے تیار کردہ نسخون کے مطابق دوا دیتے تو حیرت انگیز نتائج سامنے آتے۔ کابل سے پشاور اور کوئٹہ سے گلگت تک سے مریض ان کے کلینک پر ان کے منتظر ہوتے۔

دعا ہے کہ اللہ تعالٰی ان کے درجات بلند فرمائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *