لاہور (ڈیلی حروف آن لائن) امراض کی ماں ، قبض سے بچنے کے لئے ثقیل و بادی اشیاء مثلا میدے کی روٹی، نان ، چاول ، مٹھائی، سری پائے، کلیجی، پنیر، بیکری کی اشیائ، گوشت، انڈے، مچھلی اور مغزیات کا استعمال ترک کردیا جائے۔ یہ بات معروف طبیبہ پروفیسر ڈاکٹر محمودہ سلطانہ نے ڈیلی حروف ڈاٹ کام سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے بتاےا کہ اس مرض میں مبتلا لوگ زود ہضم اور نرم غذا استعمال کریں تو ان کے لئے بہتر ہوگا۔ڈاکٹر محمودہ سلطانہ نے بتایا کہ اس مرض کے علاج کے لئے چھلکا ،اسپغول 5 گرام (چائے کا چمچ) رات کو سونے سے پہلے نیم گرم دودھ یا تازہ پانی کے ساتھ لیا جا سکتا ہے، جبکہ مربہ ہڑڑ دو سے تین دانے رات کو سونے سے قبل نیم گرم دودھ کے ساتھ لینے سے بھی مرض میں افاقہ ہوگا۔ڈاکٹر محمودہ سلطانہ نے مزید کہا کہ اس مرض کے علاج کے طور پر گلقند 50 گرام رات سونے سے قبل نیم گرم دودھ کے ساتھ لینا بھی فائدہ مند ہے۔ڈاکٹر محمودہ سلطانہ نے ڈیلی حروف ڈاٹ کام سے گفتگو کے دوران عوام کی آگاہی کے لئے بتایا کہ گریپ فروٹ یا چکوترے کے ساتھ ایلوپیتھک ادویات استعمال کرنے سے مضر اثرات مرتب ہو سکتے ہیں ، جو لوگ ہائی بلڈ پریشر،کینسر یا کولیسٹرول کم کرنے والی ادویات استعمال کرتے ہیں وہ چکوترہ یا گریپ فروٹ اور رسدار پھل سنگترے وغیرہ استعمال کرنے سے گریز کریں۔ ڈاکٹر محمودہ سلطانہ نے کہاکہ طبی ریسرچ کرنے والے یورپی سائنسدانوں نے بتاےا ہے کہ گریپ فروٹ کے ساتھ دیگر ادویات استعمال کرنے کے مضر اثرات سے معدہ میں خون کے رساﺅ، دل کی دھڑکن میں تبدیلی، گردوں کو نقصان یا اچانک موت جیسے حادثے کا اندیشہ ہو سکتا ہے۔ ایک طبی سائنسدان ڈاکٹرڈیوڈ بیلی نے تو یہاں تک بتادےا کہ گریپ فروٹ جوس کے ایک گلاس کے ساتھ ایک گولی نگلنا ایسا ہی ہے جیسے پانی کے ایک گلاس کے ساتھ آپ دس گولیاں بیک وقت نگل لیں ۔ڈاکٹر محمودہ سلطانہ نے بتاےا کہ چکوترے کے جوس کے ساتھ دوا کو استعمال کر کے آپ شفاءیاب ہونے کی بجائے مزید مشکلات کا شکار ہو سکتے ہیں ۔